PML-N President Shahbaz Sharif called on PPP President Asif Ali Zardari at Bilawal House Karachi and discussed various issues including the political situation in the country.

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے بلاول ہاؤس کراچی میں پیپلز پارٹی کے صدر آصف علی زرداری سے ملاقات کی اور ملکی سیاسی صورتحال سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔
شہباز شریف کی بلاول ہاؤس آمد پر آصف علی زرداری نے خود ان کا استقبال کیا، ملاقات میں ملکی سیاسی صورتحال اور اپوزیشن کی مشترکہ حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیاگیا

دونوں رہنماؤں کی ملاقات کے موقع پر چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ، فرحت اللہ بابر، نوید قمر جب کہ ن لیگ کی جانب سے احسن اقبال، مریم اورنگزیب اور محمد زبیر و دیگر رہنماموجود تھے۔
بعد ازاں دونوں جماعتوں کے رہنماؤں نے مشترکہ پریس کانفرنس بھی کی۔
رہنما پیپلزپارٹی نوید قمر کا کہنا تھا کہ شہبازشریف مشکل وقت میں زخموں پر مرحم رکھنے کے لیے کراچی آئے ہیں، صرف سندھ نہیں دیگر صوبوں میں بھی سیلاب کا خطرہ ہے، یہ وقت مل کر کام کرنے کا ہے ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کا نہیں۔
نوید قمر کا کہنا تھا کہ تمام اپوزیشن کو مل کر ایک مشترکہ لائحہ عمل بنانا چاہیے تھا، اب وقت آگیا ہے کہ آل پارٹیز کانفرنس کی تاریخ دی جائے۔
فرحت اللہ بابر کا کہنا تھا کہ وفاقی پارلیمانی نظام کو چھیڑنے کی کوشش کی گئی تو نتیجہ بھیانک ہوگا، بنیادی جمہوی اصولوں اور پارلیمان کی بالادستی کے لیے مل کر کام کریں گے۔
ن لیگ کے جنرل سیکرٹری احسن اقبال کا کہنا تھا کہ ہم سندھ میں بارش سے متاثرین سے اظہاریکجہتی کے لیے آئے ہیں، سندھ کے عوام کو یقین دلاتے ہیں کہ پورا ملک ان کے دکھ میں شریک ہے، متاثرین کی بحالی کے لیے قومی سطح پر بھرپور آواز اٹھائیں گے، متاثرین کو معاوضے کی ادائیگی کے لیے وفاق سندھ حکومت کی مدد کرے۔
احسن اقبال کا کہنا تھا کہ اس حکومت کی نااہلی اور ناکامی ملک کے لیے عذاب بن چکی ہے، حکومت کی نا اہلی کے باعث ملک کی معیشت خطرے میں ہے، کشمیر کے عوام پاکستان کی طرف دیکھ رہے ہیں اور حکومت کو سمجھ نہیں آرہی کہ کیا کرنا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ دونوں جماعتوں نے میثاق جمہوریت کے اصولوں کی تجدید کی ہے، میثاق جمہوریت کے اصولوں کے تحت جدوجہد میں ہمارے اختلافات رکاوٹ نہیں بنیں گے، اس حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے تمام آپشنز کو بروئے کار لانا ہے، رہبر کمیٹی میں مشاورت کے بعد آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا۔
کراچی: قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور مسلم لیگ (ن) کے صدر نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت نے وعدے کے مطابق کراچی کو فنڈز مہیا کیے ہوتے اور

bilawal

سیاست نا کی ہوتی تو آج یہ دن نا دیکھنا پڑتا۔
شہباز شریف کے ساتھ مریم اورنگزیب اور احسن اقبال بھی کراچی پہنچے ہیں،کراچی آمد پر اپوزیشن لیڈر نے ائیرپورٹ لاؤنج میں پارٹی رہنماؤں سے ملاقات کی۔
کراچی آمد پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہبازشریف نےکہا کہ کراچی کے حالات دیکھ کریہاں آیا ہوں، بارشوں نے شہر کو بہت متاثر کیا ہے۔
اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ کراچی کو ابھی تک جتنا بنایا (ن) لیگ نے بنایا، میگا پروجیکٹ شہر میں (ن) لیگ کی جانب سے شروع کیے گیے اور ابھی تک ایسے بہت سارے منصوبے ہیں جنہیں نواز شریف نے شروع کیا۔
انہوں نے مزید کہا کہ کراچی پانی میں ڈوبا ہوا ہے اس وقت سیاست نہیں کرنی ہے، یہ وقت مخالفت برائے مخالفت کا نہیں ہے، جن کے گھر، فصلیں اور مال

مویشی تباہ و برباد ہوئے انہیں معاوضہ دیا جائے، امیر و غریب سب ہی سیلاب کی تباہ کاری سے پریشان ہیں۔
لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ وفاق نے کراچی کے لیے اربوں روپے دینے کا وعدہ کیا تھا وہ فنڈز کہاں ہیں؟ وفاق نے وعدے کے مطابق فنڈز مہیا

کیے ہوتے اور سیاست نا کی ہوتی تو آج یہ دن نا دیکھنا پڑتا، وفاق نے سندھ حکومت کے ساتھ ملکر کام کیا ہوتا تو یہ حالت نا ہوتی۔
اس سے قبل کراچی روانگی کے موقع پر جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے شہبازشریف نے کہا کہ سندھ کے عوام سے اظہار یکجہتی کا پیغام لے کر جارہا ہوں، کراچی میں بارشوں سے تباہی کے بعد سب ایک ہو کر کام کریں۔
انہوں نے کہا کہ نواز شریف علاج کروا رہے ہیں اور ڈاکٹروں کی اجازت کے بعد بلا تاخیر واپس آجائیں گے۔
شریف برادران اور کرپشن پارٹنر زرداری کی سیاست ختم ہو چکی ،خرم شیر زمان کا رد عمل ،بولے جنہیں سڑکوں پر گھسیٹنا تھا آج انہی سے سیاست میں واپسی کیلئے مدد مانگی جا رہی ہے ،معاون خصوصی شہباز گل بولےشہباز شریف شوبازی کیلئے کراچی جا سکتے ہیں ،نیب عدالت نہیں آتے ،کراچی کی حالت سندھ حکومت کی نا اہلی کی عکاس ہے

Altaf
This website is managed by Image Proud. Image Proud Inc is a 1 years old Entertainment Company that has been made for helping the people to laugh all over the worldwide. Our motive to educate people about laughter and another issue.