Sindh Education Minister Saeed Ghani has said that educational institutions closed due to Corona have been recommended to be reopened in phases as per SOPs.

وزیر تعلیم سندھ سعید غنی کا کہنا ہے کہ کورونا کی وجہ سے بند تعلیمی اداروں کو ایس او پیز کے مطابق مرحلہ وار کھولنے کی سفارش کی ہے۔
وزیر تعلیم سندھ کی زیر صدارت محکمہ تعلیم کی اسٹیرنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں تعلیمی اداروں کو کھولنے اور جاری کردہ ایس او پیز پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
سعید غنی کا اس موقع پر کہنا تھا کہ وفاقی وزیر تعلیم کی زیر صدارت تمام صوبائی وزرائے تعلیم کا اجلاس 7 ستمبر کو ہو گا، جس میں تعلیمی اداروں کو کھولنے سے متعلق فیصلہ کیا جائے گا۔
ان کا کہنا تھا کہ اس وقت ملک میں کورونا کی صورتحال بہت حد تک بہتر ہے، ایس او پیز کو فائنل کیا ہے اور کچھ سفارشات بھی دی ہیں۔
سعید غنی کا کہنا تھا کہ سفارشات کے مطابق 15 ستمبر کو تمام تعلیمی ادارے ایک ساتھ نہ کھولے جائیں، تعلیمی اداروں کو مختلف اسٹیج میں کھولا جائے۔
ان کا کہنا تھا کمیٹی سفارشات کے مطابق 15 ستمبر سے کلاس نہم سے اوپر کی کلاسز کو کھولا جائے، کلاس 6 سے 8 تک 21 ستمبر اور پری پرائمری سے 5 تک کلاس کو 28 ستمبر سے کھولا جائے۔
انہوں نے کہا کہ ہم سندھ کی جانب سے وفاق کی کمیٹی کو سفارش کریں گے، اگر کوئی اسکول مذکورہ تاریخ سے قبل کھلتا ہے تو وہ خلاف قانون قرار پائے گا لیکن اگر کوئی اسکول ایس او پیز کے لیے کچھ وقت مانگتا ہے تو اسے دیا جا سکتا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ ہم تعلیمی اداروں کے حوالے سے 7 ستمبر کو این سی او سی کے اجلاس کے بعد کوئی حتمی اعلان کریں گے۔
ترجمان وزیر تعلیم سندھ نے بتایا کہ نویں اور دسویں جماعت کے نتائج کا اعلان 15 ستمبر کو کیا جائے گا جب کہ گیارہویں اور بارہویں جماعت کے نتائج کا اعلان 30 ستمبر کو ہو گا۔
ترجمان کا مزید بتانا تھا کہ نتائج کے اعلان کے ایک ہفتے بعد مارک شیٹ تعلیمی اداروں میں آجائیں گی۔
ان کا کہنا تھا کہ آج سب کمیٹی نے سفارشات اسٹرینگ کمیٹی میں پیش کیں، سفارشات منظور کی گئی ہیں لیکن حتمی فیصلہ 7 ستمبر کو ہو گا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے کورونا کی وجہ سے بند تعلیمی ادارے کھولنے کے لیے دائر درخواست مسترد کردی۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ یہ عدالت مفروضے کی بنیاد پر تو کوئی حکم جاری نہیں کرسکتی ایگزیکٹو کا کام اسے کرنے دیں۔
عدالت عالیہ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے کورونا وباء کے باعث بند تعلیمی ادارے کھولنے کے حوالے سے دائر درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزار کے وکیل نے دلائل دیئے کہ پہلے بھی پٹیشن دائر کی جس پر عدالت نے متعلقہ ادارے سے رجوع کی ہدایت کی، متعلقہ اداروں میں درخواست دی لیکن کچھ نہیں ہوا۔ حکومت تعلیمی ادارے کھولنے کے حوالے سے سنجیدگی نہیں دکھا رہی۔
چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ یہ عدالت مفروضے کی بنیاد پر تو کوئی حکم جاری نہیں کر سکتی، یہ ہو ہی نہیں سکتا کہ مفاد عامہ کا اتنا اہم معاملہ ایگزیکٹو کے مدنظر نہ ہو، یہ ایگزیکٹو کا کام اور ذمہ داری ہے انہیں اپنا کام کرنے دیں، عدالت پالیسی کے معاملات میں مداخلت نہیں کرتی، عدالت نے دلائل مکمل ہونے کے بعد درخواست مسترد کردی۔

Altaf
This website is managed by Image Proud. Image Proud Inc is a 1 years old Entertainment Company that has been made for helping the people to laugh all over the worldwide. Our motive to educate people about laughter and another issue.